Type to search

خبریں

سدھو نے پاکستان کی حمایت میں دیا بیان واپس لینے سے انکار کر دیا

بھارتی سیاستدان، ٹی وی سٹار اور سابق کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو نے کہا ہے کہ وہ پلوامہ حملے اور پاکستان کے بارے میں اپنے دیے گئے بیان سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ پلوامہ حملے کے بعد سدھو نے بیان دیا تھا کہ ایک پوری قوم کو “دہشت گردوں” کے حملے کے باعث مورد الزام نہیں ٹھہرایا جا سکتا۔ اس بیان کو لے کر بھارت میں مختلف گروہوں کی جانب سے  سدھو کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا اور انہیں مشہور ٹی وی پروگرام “کپل شرما شو” سے بھی نکال دیا گیا۔

navjot-kapil-sharma

ٹی وی پروگرام سے نکالے جانے کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے سدھو نے کہا کہ انہیں اس بارے میں کوئی علم نہیں ہے لیکن انہوں نے اپنا بیان واپس لینے سے انکار کر دیا۔ “مجھے اس بارے میں علم نہیں ہے کہ مجھے کپل شرما شو سے نکال دیا گیا ہے، لیکن میں ماضی میں بھی کہتا آیا ہوں اور آج بھی یہی کہوں گا کہ دہشت گردوں کے اقدامات کے باعث ایک پوری قوم کو الزام نہیں دیا جا سکتا”۔

سدھو نے کہا کہ وہ ذاتی وجوہات کے باعث کپل شرما شو کی دو قسطوں کیلئے دستیاب نہیں تھے اور چینل نے ان کی جگہ ارچنا پورن سنگھ کو شو میں مدعو کر لیا۔ انہیں ابھی تک چینل کی جانب سے معطل کیے جانے یا برخاست کیے جانے کا کوئی پیغام موصول نہیں ہوا ہے۔

بالی وڈ کے مشہور اداکار انوپم کھیر نے سدھو پر سخت تنقید کی اور ان کے بیان کو “فضول” قرار دیا۔ انہوں نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ “جب  آپ بہت زیادہ بولتے ہیں تو یہ عادت  آپ کو فضول گفتگو کی جانب مائل کر دیتی ہے”۔

پنجاب کے وزیر اعلیٰ ارمیندر سنگھ نے سدھو کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ  سدھو  کا بیان “ریاست مخالف” نہیں تھا، جیسا کہ بہت سے لوگوں نے اسے قرار دیا۔ ارمیندر سنگھ کا کہنا تھا کہ سدھو ماضی میں کرکٹر رہے ہیں اور وہ خود ایک سپاہی رہے ہیں، سدھو کو دفاعی معاملات کی باریک بینیوں کا علم نہیں ہے اور اسی وجہ سے سدھو کا ردعمل دوستانہ بنیادوں  پر تھا۔

گذشتہ ہفتے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی پیرا ملٹری فورس کے 44 اہلکار ایک خود کش حملے کے نتیجے میں ہلاک ہو گئے تھے، حملہ آور نے بارود سے بھری ایک کار ان کے قافلے سے ٹکرا دی تھی۔

Tags:

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *