Type to search

انسانی حقوق خبریں فيچرڈ

سکھر: روزے کے دوران ہیٹ سٹروک مرکز کھولنے پر مذہبی تنظیم کا اعتراض

سکھر میونسپل کارپوریشن (ایس ایم سی) کی جانب سے ہیٹ اسٹروک کے متاثرین کی فوری امداد کے لیے ایوب گیٹ میں پانی کا ایک مرکزی کیمپ قائم کیا گیا تھا کیونکہ سندھ کے مختلف علاقوں میں درجہ حرارت 40 سے 47 ڈگری سینٹی گریڈ تھا تاہم چند مذہبی تنظیموں کے مسلح کارکنوں نے ہیٹ اسٹرک سینٹر کو اکھاڑ پھینکا اور ہوائی فائرنگ کرتے ہوئے منتظمین کو کام روکنے پر مجبور کر دیا۔

شہر میں قائم اس طرح کے سینٹر صبح 10 بجے سے شام 5 بجے کے دوران فعال ہوتے ہیں۔ایس ایم سی کے ٹھکیدار توفیق بندھانی کے مطابق چند مذہبی تنظیموں کے کارکنوں نے احترام رمضان آرڈی نینس کا حوالہ دیتے ہوئے روزہ کے دوران اس طرح کے سینٹر کے قیام پر اعتراض کیا اور انہوں نے کئی منتظمین سے سینٹرز بند کرنے کا مطالبہ کیا ورنہ ‘نتائج کا سامنا’ کرنے کی دھمکی دی۔

خطرات میں گھرے یہ منتظمین ان کی اس دلیل پر آمادہ نہیں تھے کہ پانی پینے والے زیادہ تر افراد کو ہیٹ اسٹروک مسئلہ نہیں ہے۔

مسلسل دھمکیوں اور سینٹرز کے منتظمین کی جانب سے ان کی بات ماننے سے انکار پر ایک مسلح گروہ نے ایوب گوٹھ سینٹر کو نشانہ بنایا اور اس کے منتظمین کو اس سے بندکرنے پر مجبور کیا اور انہوں نے منتظمین ک بھگانے کے لیے ہوائی فائرنگ بھی کی۔

میونسپل واٹر ورکس کے انچارج عطاالرحمٰن کا کہنا تھا کہ حملہ آوروں کا تعلق ایک مذہبی تنظیم سے ہے۔ان کا کہنا تھا کہ میونسپل اتھارٹی نے ٹھیکیداروں کو شہر میں قائم پانچ سینٹرز کو وقتی طور پر بند رکھنے کی ہدایت کی ہے تاہم ان سینٹرز کو متعلقہ حکام سے اہم مشاورت کے بعد دوبارہ کھول دیا جائے گا۔

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *