Type to search

انصاف خبریں

بیوی کو میکے سے گھر لانے سے متعلق شوہر کی درخواست پر سماعت، ججز کے دلچسپ مشورے

بیوی کو میکے سے لانے کے لیے شوہر سپریم کورٹ پہنچ گیا جس پر ججز نے بھی درخواست گزار کو مفید مشوروں سے نوازا۔

بیوی کو میکے سے گھر لانے سے متعلق شوہر کی درخواست پر سماعت سپریم کورٹ کے جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے کی۔ درخواست گزار عمردراز کے وکیل نے اپنے دلائل میں کہا کہ ان کا مؤکل بیوی کے ساتھ رہنا چاہتا ہے اور اب بھی بیوی اور بچوں سے پیار کرتا ہے۔

دوران سماعت جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے وکیل نے سوال کیا کہ کیا خاتون طلاق لینا چاہتی ہے؟ بیوی تو چاہتی ہے کہ شادی قائم رہے لیکن ایسا تو نہیں ہو گا کہ بازار سے صرف پھول لے کر بھیج دیں تو بیوی واپس آجائے گی، ان کی بیوی نان نفقہ مانگ رہی ہے۔

جسٹس قاضی فائز عیسی نے اپنے ریمارکس میں مزید کہا کہ بچی کو چاند ستارے نہیں چاہئیں، عید پر اپنی بیوی کے لیےکپڑے بھیج دیا کریں، کچھ تو ایسا کریں۔ جسٹس مشیر عالم نے ریمارکس میں کہا کہ عدالتوں میں ایسے معاملات حل نہیں ہوتے، بیوی کو خرچہ دے کر اپنی طرف مائل کریں، پیار محبت سے اپنی بیوی کو کوئی چیز تو بھیجیں تاکہ عورت کو بھی پتا چلے کہ شوہر اس سے پیار کرتا ہے۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے وکیل سے استفسار کیا کہ کیا آپ شادی شدہ ہیں؟ جس پر وکیل نے کہا جی میں میں شادی شدہ ہوں۔ جسٹس مشیر عالم نے کہا اپنے مؤکل عمردراز کو بھی گُر سکھائیں کہ بیوی کو کیسے خوش رکھا جاتا ہے۔

درخواست گزار کی جانب سے معاملے کو آپس میں مل بیٹھ کر حل کرنے کی یقین دہانی کرائے جانے کے بعد عدالت نے معاملہ نمٹا دیا۔

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *