Type to search

انٹرٹینمنٹ بین الاقوامی خبریں میڈیا

جنسی ہراسانی کے الزامات پر انو ملک ایک بار پھر انڈین آئیڈل سے باہر

بھارتی رئیلیٹی شو انڈین آئیڈل کے جج انوملک جنسی ہراسانی کے الزامات کی وجہ سے ایک بار پھر شو سے باہر ہو گئے۔ سونی ٹی وی انتظامیہ نے انوملک کو شو سے نکالے کی تصدیق کر دی۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ برس ’’می ٹو‘‘ مہم کے تحت موسیقار اور رئیلیٹی شو انڈین آئیڈل کے جج انوملک پر بھی الزامات عائد ہوئے تھے۔ ان پر ایک نہیں بلکہ کئی خواتین نے جنسی ہراسانی کا الزام لگایا تھا جس کے بعد انہیں گذشتہ برس انڈین آئیڈل سے باہر کر دیا گیا تھا۔

انوملک پر گلوکارہ شوئیتا پنڈت اور سونا موہاپاترا سمیت انڈین آئیڈل سے منسلک دیگر خواتین نے جنسی ہراسانی کے الزامات لگائے تھے۔

انڈین آئیڈل کے حالیہ سیزن میں شو کی ریٹنگ کے لئے انو ملک کو ایک بار پھر بطور جج ذمہ داریاں سونپی گئیں اور وہ ایک بار پھر بطور جج فرائض انجام دے رہے تھے۔ لیکن، انوملک پر جنسی ہراسانی کا الزام لگانے والی گلوکارہ سونا موہاپاترا نے انہیں شو سے نکالنے اور سونی ٹی وی انتظامیہ کے خلاف مہم کا اعلان کیا۔

اپنے بیان میں انہوں نے حیرانی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سونی ٹی وی کس طرح ایسے شخص کو ایک بار پھر جج کی کرسی پر بٹھا سکتا ہے جس پر جنسی ہراسانی کے سنگین الزامات ہوں۔

اس کے علاوہ نیشنل کمیشن آف ویمن نے بھی سونی ٹی وی کو نوٹس جاری کیا۔

جس کے بعد سونی ٹی وی انتظامیہ نے انوملک کو شو سے نکالے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ انوملک انڈین آئیڈل میں اپنی ذمہ داریوں سے سبکدوش ہو رہے ہیں۔

Tags:

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *