Type to search

Coronavirus خبریں

ہنگو: کرونا سے جاں بحق شخص کے نماز جنازہ کی دل دہلا دینے والی تفصیلات سامنے آگئیں

کرونا وائرس کے عذاب نے ملک خداداد کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے اور روز اندوہناک صورتحال سامنے آرہی ہے۔ اب ایسی ہی تفصیلات خیبر پختونخواہ میں کرونا سے جاں بحق ہونے والے 36 سالہ شخص کے نماز جنازہ سے متعلق سامنے آئی ہیں جس نے ہر سننے والے  پاکستانی کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق اے ایس ہی فرحان خان نے ایک کرونا سے جاں بحق ہونےوالے شخص کی نماز جنازہ کے حوالے سے تفصیلات شئیر کی ہیں۔ ان کے مطابق  کرونا سے جاں بحق ہونے والے اس شخص کے تابوت کو کوئی ہاتھ لگانے کو تیار نہ تھا۔  متوفی کے تابوت کو پشاور سے ایمبولنس میں میں ہنگو لایا گیا اور اسے سوگواروں سے دور فاصلے پر رکھا گیا تھا۔ جبکہ اسکے لوحقین کو بھی ایک خاص مقام سے آگے جانے کی اجازت نہیں تھی۔

آخری رسومات میں شریک متوفی کے والد نے حفاظتی لباس پہن رکھا تھا لیکن ان کو بھی ایمبولینس سے اترنے کی اجازت نہیں دی گئی ۔نماز جنازہ میں اصرف پانچ افراد تھے جو اس وقت کی بے بسی سے مارے جذبات کے رو پڑے۔

تدفین کے لئے تابوت کو لے کر قبر تک جانا تھا تاہم ریسکیو اہلکار تابوت کو ہاتھ لگانے کو تیار نہیں تھے۔ پھریہ فیصلہ کیا گیا ایمبولینس سے رسیوں کی مدد سے تابوت کو کھینچ کر قبر تک لایا جائے لیکن اس ہر بھی رسی باندھنے کو کوئی تیار نہیں تھا۔غم سے نڈھال متوفی کے والد نے بہتی ہوئی آنکھوں اور سکستی آہوں کے ساتھ  خود رسی باندھی۔ بے بسی کا ایک دلخراش منظر تھا ۔ اس موقع پر موجود افراد دھاڑیں مار کر رو دیئےریسکیو اہلکاروں نے رسیوں کی مدد سے تابوت کو ایمبولینس سے گھسیٹ کر قبر میں اتارا۔وہاں موجود ہر شخص اس بے بسی کے عالم سے اللہ کی پناہ مانگتا رہا۔ 

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *