Type to search

Coronavirus خبریں سیاست

کراچی کی گلیوں میں وفاقی وزیر کی کلاس: ‘جھوٹی بات ہے،کارڈ بینظیر کا ہے، فوٹو عمران کا لگادیا ہے’

سیاست کی بات کی جائے تو دنیا بھر میں حکمران طبقہ خود کو  ارسطو کے مقابلے کا دانا، ماکیاویلی کے مقابلے کا شاطر، حاتم طائی کے برابر کا سخی اور کم از کم  آئنسٹائن کے مماثل ذہین سمجھتا ہے۔ جبکہ عوام کو اکثر بے وقوف اور بھولا سمجھا جاتا ہے۔

لیکن شاید ایسا سمجھنے والے سیاستدان اور حکمران صرف رسوائی ہی مول لیتے ہیں۔ کیونکہ عوام نے ہر بار ثابت کیا ہے کہ وہ اپنا صحیح اور غلط جانتے ہیں۔ انہیں سچے اور جھوٹے ، کھرے کھوٹے، بے ایمان اور ایماندار کے درمیان فرق خوب معلوم ہے۔  ایسا ہی واقعہ کراچی میں پیش آیا ہے جہاں کی گلیوں میں وفاقی وزیر علی زیدی جب اپنے رہنما عمران خان کی تعریف و توصیف کرتے ہوئے احساس پروگرام کے تحت دیئے جانے والی 12000 کی رقم کو عمران خان کی طرف سے دی جانے والی رقم قرار دے رہے تھے تو انکا ٹاکرا ایک خاتون سے ہوگیا جس نے وفاقی وزیر کو جھوٹ اور سچ کے درمیان فرق صاف بتا دیا۔ 

ایک وائرل ہونے والی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ وفاقی وزیر علی زیدی مستحقین میں رقم بانٹنے کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہہ رہے کہ یہ پیسے حکومت پاکستان کے ہیں۔ اور یہ زبردست پروگرام وزیر اعظم عمران خان کا ہے یہ بلاول ہاؤس سے آئے پیسے نہیں ہیں۔ ابھی وہ بات کر رہے تھے کہ ایک خاتون نے انہیں ٹوکا اور بتایا کہ عمران  نے تو کبھی بال لے کر نہیں کھیلا ہوگا تو ہمیں کہاں سے دے گا، ہمارے پیسے ضبط کئے جا رہے ہیں۔ یہ پیسہ عمران خان کا نہیں ہے۔ اس پر علی زیدی نے کہا کہ یہ 12000 تو عمران خان دے رہا ہے۔ تو خاتون نے کہا کہ کہ نہیں یہ جھوٹی بات ہے۔ یہ بینظیر کا پیسہ ہے۔ کارڈ بینظر کا ہے اوپر فوٹو عمران خان کا لگا کر کہتے ہیں کہ عمران خان دے رہا ہے۔ 

یہ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو چکی ہے اور سوشل میڈیا صارفین اس خاتون کی جہاں تعریف کر رہے ہیں تو وہیں وفاقی وزیر کو اس موقع پر سیاست سے باز رہنے کی تلقین بھی کر رہے ہیں۔ تاہم پی ٹی آئی سپورٹرز نے اسے ایک پلانٹڈ واقعہ قرار دیا ہے۔

 

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *