Type to search

انٹرٹینمنٹ بین الاقوامی خبریں

بالی ووڈ کے معروف اداکار عرفان خان کے آخری الفاظ نے مداحوں کو آبدیدہ کر دیا

بالی ووڈ کے معروف اداکار عرفان خان کا ممبئی کے ایک ہسپتال میں علاج کے دوران انتقال ہو گیا، اداکار کو منگل 28 اپریل کو طبیعت بگڑنے کے بعد ممبئی کے کوکلا بین ہسپتال میں داخل کيا گیا تھا اور 29 اپریل کی صبح ان کا انتقال ہو گیا۔

واضح رہے کہ 25 اپریل کو جے پور میں ان کی والدہ کا انتقال ہو گیا تھا لیکن لاک ڈاؤن کے سبب عرفان خان اپنی والدہ کی آخری رسومات میں شرکت کے لیے نہیں پہنچ سکے تھے۔

عرفان خان گذشتہ تقریباً دو برس سے دماغ کے ٹیومر کے مرض میں مبتلا تھے۔ پہلی بار 2018 میں جب انہیں اس بیماری کا پتہ چلا تو وہ علاج کے لیے لندن گئے تھے اور کئی ماہ کے علاج کے بعد واپس آئے تھے۔

اب بھارتی میڈیا پر عرفان خان کے خاندانی ذرائع کا حوالہ دے کر ان کے آخری الفاظ کے بارے میں بتایا گیا ہے۔ شوبز انڈسٹری سمیت دنیا بھر میں ان کے مداح ان کے آخری الفاظ کو سوشل میڈیا پر شئیر کر رہے ہیں۔

بھارتی ذرائع ابلاغ کا بتانا ہے کہ مرحوم والدہ کے انتقال کے باعث عرفان خان شدید غم میں مبتلا تھے۔ وہ اپنی والدہ کے انتقال اور ان کے جنازے میں شرکت نہ کر پانے کی وجہ سے بھی بہت زیادہ غمزدہ تھے اور پھر اسی دوران ان کے طبیعت بگڑ گئی۔

ہسپتال میں بدھ کی صبح عرفان خان نے اپنی اہلیہ کو بلایا اور کہا کہ’’دیکھو ماں آئی ہے، وہ میرے بستر پر بیٹھی ہے، مجھے لینے آئی ہے‘‘۔ یہ باتیں سن کر اداکار کی اہلیہ خود پر قابو نہ رکھ سکیں اور زار و قطار رونے لگیں۔ عرفان خان کی جانب سے ادا کیے گئے یہ ان کی زندگی کے آخری الفاظ تھے اور پھر اس کے بعد وہ انتقال کر گئے۔

عرفان خان کے پسماندگان میں اہلیہ اور دو بیٹے ایان اور بابیل شامل ہیں۔

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *