Type to search

خبریں طب عجیب و غریب

ہمارے ہاتھ چلتے ہوئے سیدھے اور بھاگتے وقت مڑتے کیوں ہیں؟ کیا آپ نے کبھی سوچا؟

کیا آپ نے کبھی نوٹ کیا ہے کہ چلتے ہوئے آپ کے ہاتھ سیدھے رہتے ہیں لیکن جیسے ہی آپ دوڑنا شروع کرتے ہیں آپ کے ہاتھ کوہنیوں سے مُڑ جاتے ہیں۔

اس کی وجہ کوہنی کی حرکت ہوتی ہے، مگر کیا ایسا کرنا دوڑنے کی رفتار بڑھانے میں مدد دیتا ہے؟ جریدے جرنل آف ایکسپریمنٹل بائیولوجی میں شائع ہونے والی ہارورڈ یونیورسٹی کی تحقیق میں سامنے آنے والے نتائج کو درست مانا جائے تو دوڑتے ہوئے ہاتھوں کو سیدھا رکھنا بھی ہماری رفتار کو متاثر نہیں کرتا۔

ویسے دیکھنے میں عجیب یا حیران کن لگے اور لوگوں کو گھورنے پر مجبور کردے مگر دوڑتے ہوئے ہاتھوں کو سیدھا رکھنا بھی اتنا ہی مؤثر ہے جتنا انہیں کوہنی کی مدد سے موڑ لینا۔ آپ خود غور کریں تو جب آپ دوڑتے ہوئے رفتار بڑھائیں گے تو اس بات کا قوی امکان ہے کہ ہاتھ کوہنی کی جانب مڑجائیں گے۔

اب تک سائنس دان یہ نہیں جانتے تھے کہ اس کی وجہ کیا ہے۔ تو محققین نے 8 رضاکاروں کو ایک ٹریڈ مِل پر چلنے اور دوڑنے کا کہا، اس دوران کچھ افراد کے ہاتھ سیدھے رکھے گئے جبکہ کچھ کو موڑنے کا کہا گیا۔ کچھ رضاکاروں کو آکسیجن ماسک پہنائے گئے تاکہ دیکھا جاسکے کہ وہ کتنی آکسیجن استعمال کرتے ہیں۔

محققین کا خیال تھا کہ دوڑتے ہوئے کوہنیوں کا مڑ جانا جبکہ چلتے ہوئے ہاتھوں کو سیدھا رکھنا رفتار برقرار رکھنے میں زیادہ موثر ثابت ہوتا ہے مگر یہ خیال 50 فیصد ہی درست ثابت ہوسکا۔ نتائج سے معلوم ہوا کہ چہل قدمی کرتے ہوئے کوہنی کو موڑ لینے سے زیادہ جسمانی توانائی خرچ ہونے لگی جبکہ آکسیجن کے استعمال کی شرح بھی 11 فیصد تک بڑھ گئی، جبکہ حیران کن طور پر دوڑنے والے افراد میں دونوں طریقوں سے کوئی فرق سامنے نہیں آسکا۔

محققین کا کہنا تھا کہ وہ یہ نہیں جان سکے کہ ہم دوڑتے ہوئے ہاتھ اوپر کی جانب موڑ کیوں لیتے ہیں مگر ان کے خیال میں اس کے پیچھے فائدہ مند وجہ چھپی ہے اور وہ یہ ہے کہ اس طرح ہاتھ سر کو ایک پوزیشن میں مستحکم رکھنے میں مدد دیتے ہیں۔

اس سے قبل 2016 میں امریکہ کی مشی گن یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا تھا کہ انسان چلتے ہوئے اپنے ہاتھوں کو حرکت دے کر جسمانی توانائی کو بچاتے ہیں۔

تحقیق کے مطابق اگر لوگ چلتے ہوئے اپنے ہاتھوں کو ساکت رکھیں تو حرکت دینے کے مقابلے میں ان کی 12 فیصد میٹابولک توانائی زیادہ خرچ ہوتی ہے۔ قدرتی طور پر ہاتھوں کا چلنا، چلنے کا سب سے بہترین طریقہ ہے جو جسمانی توانائی کو بچاتا ہے۔

محققین نے بتایا کہ ہاتھوں کی حرکت ہماری ٹانگوں سے جڑی ہوتی ہے، جب آپ بائیں پیر کو آگے بڑھاتے ہیں تو دایاں ہاتھ آگے بڑھتا ہے اور ایسا قدرتی طور پر ہوتا ہے کیونکہ اگر بائیں پیر کے ساتھ بایاں ہاتھ آگے بڑھے تو 26 فیصد زیادہ جسمانی توانائی خرچ ہوگی۔

محققین کے مطابق چلتے ہوئے ہاتھوں کی حرکت سے توانائی اس لیے بچتی ہے کیونکہ ہاتھ پنڈولم کا کام کرتے ہیں اور چلنے کے ساتھ حرکت میں آکر جسمانی توانائی کا اخراج کم کردیتے ہیں۔

Tags:

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *