Type to search

شاعری عوام کی آواز

راجا مسرور حسن کی نظم ’روح میں سُروتال رہتا ہے‘

وسعتِ کائنات میں ساتھی  

اک تیرا ہی خیال رہتا ہے

لمس، چاہت، مروتیں، خوشبو

درد ہی دردِ حال رہتا ہے

وقت کیا ہے شعورِ بے خوابی

دل میں ہر دم سوال رہتا ہے

پھول، مٹی، ہوا اور کرنوں میں

عشق کا کچھ کمال رہتا ہے

درد سرمایائے وفا بن کر

مظطرب محوِ خال رہتا ہے

حادثوں سے بھرا یہ چوراہا  

منزلِ لب وصال رہتا ہے

زیست سے ظلم کو مٹانے میں  

لال منظربحال رہتا ہے

دھن تو سب نے ہی سُن رکھی ہوگی

روح میں سُروتال رہتا ہے

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *