Type to search

حکومت خبریں دہشت گردی قومی

احسان اللہ احسان کو ہم استعمال کر رہے تھے، ڈی جی آئی ایس پی آر کا انکشاف

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے کہا ہے کہ احسان اللہ احسان کو ہم استعمال کر رہے تھے، احسان اللہ احسان کے آڈیو ٹیپ میں دعوے سراسر بے بنیاد ہیں، احسان اللہ احسان کی انفارمیشن سے ہمیں بہت فائدہ ہوا، 20 سال کے دوران جو جنگ لڑی، دشمن کے عزائم کو ناکام بنا دیا۔

راولپنڈی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ترجمان پاک فوج میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا تھا کہ آزادی ایک بہت بڑی نعمت ہے جس کی قدر مقبوضہ کشمیر کی ماؤں سے پوچھیں جو بیٹوں کو پاکستانی پرچم میں دفن کرتی ہیں، بھارت ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت کشمیریوں پر ظلم کررہا ہے، خواتین اور بچوں کی حرمت کو پامال کیا جارہا ہے، مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں ہو رہی ہیں، اقوام متحدہ کے مبصر گروپ اور انٹرنیشنل میڈیا کو مقبوضہ کشمیر میں جانے کی اجازت نہیں۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ کشمیریوں کے خلاف مظالم پر اٹھنے والی آوازیں دنیا بھر میں گونج رہی ہیں، انسانی حقوق کی تنظیموں اور انٹرنیشنل میڈیا نے بھی بھارتی ظلم و جبر کو بے نقاب کیا، بھارت نے لائن آ ف کنٹرول پر بھی معصوم شہریوں کو نشانہ بنایا، 22 جولائی کو عالمی میڈیا نے آزاد کشمیر کا دورہ کیا، بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں لائن آف کنٹرول پر جانے کی اجازت نہیں، لائن آف کنٹرول کے قریب رہائشیوں کے گھروں میں شلٹرز بنائے جارہے ہیں، آزاد کشمیر کے عوام کا تحفظ ہر طور ممکن بنایا جائے گا۔

ترجمان پاک فوج نے کہا کہ حالیہ عالمی رپورٹ میں بھی بھارت میں دہشتگرد گروپس کی نشاندہی کی گئی، بھارت نے اندرونی ناکامیوں کو چھپانے کے لئے خطے کا امن داؤ پر لگا دیا، بھارت پاکستان میں ہونے والی دہشت گردی میں ملوث ہے، کراچی اسٹاک ایکسچینج حملہ ہو یا چینی قونصل خانے پر حملہ، سب کے تانے بانے بھارت سے ہی ملتے ہیں، بھارت اسلحہ خریدنے والے ممالک میں سرفہرست ہے، لیکن جنگیں اسلحے کے زور پر نہیں جیتی جاتیں، بھارت 5 کے بجائے 500 رافیل طیارے بھی خرید لے افواج پاکستان دشمن کو بروقت جواب دینے کے لئے ہمہ وقت چوکس اور تیار ہیں۔

میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا تھاکہ پاکستان نے افغانستان میں امن کی بحالی کے لئے بھرپور کردار ادا کیا، پاکستان افغانستان میں امن و امان کے قیام کے لئے تیار ہے، افغانستان میں امن کا مطلب پاکستان میں امن ہے، پاک افغان سرحد پر دیر پا اقدامات کیے جارہے ہیں، 2611 کلومیٹر پر باڑ پر کام مکمل کیا جاچکا ہے، پاک ایران بارڈر پر بھی باڑ لگانے کا کام جاری ہے۔

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *