Type to search

انسانی حقوق خبریں خواتین مذہب

بیوی بد صورت ہو تو مرد نشہ کرکے سیکس کرسکتا ہے: مراکشی امام کا فتویٰ

سیکس انسانی زندگی کے اہم معاملات میں سے ایک ہے اور اس میں لذت پانے اور اسکی تکمیل کےلئے انسان کسی بھی حد تک جاتے ہیں۔ شاید یہی وجہ ہے کہ ہر مذہب میں سیکس کے طریقہ کار پر احکامات جاری کیئے گئے ہیں اور ساتھ ہی ان پر عملدرامد کے بھی اصول بھی بنائے۔  اب ایک نیا فتویٰ سامنے آیا ہے جس میں ایک بار پھر سیکس کے حوالے سے نئی بات کی گئی ہے۔ اور ایک بار پھر خواتین نشانے پر ہیں۔ 

ہم سب کی جانب سے شائع کردہ خبر جوکہ پہلی بار کلاریاون پراجیکٹ کی ویب سائٹ پر شائع ہوئی تھی میں کہا گیا ہے کہ شمالی افریقہ کے ملک مراکش کے ایک امام نے ایک حیران کن فتویٰ جاری کیا ہے۔ فتوے میں امام نے کہا ہے کہ ”جن مردوں کی بیویاں ’بدقسمتی سے‘ بدشکل ہیں وہ ان کے پاس جانے سے قبل منشیات استعمال کر سکتے ہیں تاکہ انہیں ان کی بیویاں خوبصورت لگیں۔

اطلاعات کے مطابق امام صاحب نے فتوے میں کہا ہے کہ ”ایسے مرد جن کی بدقسمتی سے بدصورت عورتوں سے شادی ہوجاتی ہے ان کے لیے منشیات کا استعمال بہترین ہے۔ اس طرح ان کی بدصورت بیویاں بھی انہیں حوروں جیسی خوبصورت لگنے لگیں گی۔“ تاہم اس فتوے میں  اتنی رعایت ضرور رکھی گئی ہے کہ عمر کی حد مقرر کر دی۔  جس میں کہا گیا ہے کہ 40سال سے کم عمر مرد ہی بدصورت بیوی کے پاس جانے سے قبل منشیات استعمال کر سکتے ہیں اور یہ ان کے لیے فائدہ مند ہو سکتی ہیں۔ بڑی عمر کے لوگوں کے لیے یہ درست نہیں۔

صارفین ایسی بیویوں کے لئے بھی احکامات پوچھ رہے ہیں جن کے شوہر بدصورت ہیں۔

Tags:

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *