Type to search

جرم خبریں

نئے آئی جی پنجاب پولیس پر انسانی سمگلنگ کے کاروبار میں ملوث ہونے کا الزام

جنوری 2019 میں وزارت داخلہ کو پیش کی گئی تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق ، پنجاب کے نئے پولیس چیف انعام غنی کو بینظیر بھٹو انٹرنیشنل ایئرپورٹ ، اسلام آباد میں پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز (پی آئی اے) کے ملازمین کے ساتھ ملی بھگت کے لئے انسانی اسمگلنگ کی سہولت فراہم کرنے کا قصوروار پایا گیا تھا۔

انسانی اسمگلنگ کے رنگ کی انکوائری اس وقت کی گئی جب برطانوی ہائی کمیشن نے ہیتھرو ہوائی اڈے پر افغان مہاجرین کی سمگلنگ سے متعلق یہ مسئلہ سنہ 2014 میں پاکستانی حکام کے نوٹس میں لایا۔

ڈان کی جنوری 2019 میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق ، ایف آئی اے نے شکایت پر کوئی کارروائی نہ کرنے کا الزام ایف آئی اے کے ’اینٹی ہیومن ٹریفکنگ سیل‘ پر لگایا تھا۔

رپورٹ میں یہ الزام لگایا گیا ہے کہ غنی ، جو ُاس وقت ایف آئی اے کے ڈائریکٹر تھے نے  ‘بی بی آئی اے پی کے ذریعے انسانی اسمگلنگ میں آسانی پیدا کرنے کے لئے پروازوں کی جانچ جیسے قانونی رکاوٹوں کو دور کیا ، ان کی آمادگی کے بغیر جعلی پاکستانی پاسپورٹ پر افغان شہریوں کا نیٹ ورک بی بی آئی اے پی میں پی آئی اے اور ایف آئی اے امیگریشن عملے کے لئے انسانی اسمگلنگ کا رنگ چلانا ناممکن تھا۔۔

یاد رہے کہ نومنتخب سی سی پی او لاہور عمر شیخ اور پولیس چیف کے مابین فسادات کے بعد حکومت نے منگل کے روز انسپکٹر جنرل پولیس شعیب دستگیر کو ہٹانے کے بعد انعام غنی کو پنجاب کا نیا پولیس سربراہ مقرر کیا تھا۔ دستگیر ، جنھیں تقرری کے وقت وزیر اعظم نے بہترین پولیس چیف کا درجہ دیا تھا ، نے عمر شیخ کے ساتھ کام کرنے سے انکار کردیا تھا۔

Tags:

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *