Type to search

تاریخ ویڈیوز

قائد اعظم کی موت طبعی تھی یا قتل؟

قائد کی وفات کی کہانی 11 ستمبر 1948 کی صبح کو شروع ہوتی ہے جب کراچی سے دو جہاز کوئٹہ آئے۔ قائد کے لئے ان کے خصوصی طیارے وائی کنگ میں دو سیٹوں کو جوڑ کر بستر بنایا گیا۔ جب کرنل الٰہی بخش نے جہاز میں موجود آکسیجن کے سلنڈرز کو دیکھا تو ان میں آکسیجن بہت کم تھی۔ سوال یہ ہے کہ ایسا کس نے کیا؟

ایک بیمار آدمی جس کے پھیپھڑے کام کرنا چھوڑ چکے ہوں، اس کے لئے آکسیجن کی زیادہ ضرورت ہوتی ہے مگر کراچی سے بھیجے گئے جہاز میں آکسیجن سلنڈر میں آکسیجن کی مقدار بہت کم کیوں رکھی گئی؟ کرنل الٰہی بخش کے بقول کوئٹہ کے ڈاکٹروں نے قائد کے لئے آکسیجن سے بھرے سلنڈرز کا انتظام کیا۔

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *