Type to search

خبریں مذہب

پشاور میں ایک اور احمدی محبوب خان مذہبی منافرت کی بنا پہ قتل

پشاور میں ایک اور احمدی کو نامعلوم افراد نے اتوار کی صبح گولی مار کر قتل کر دیا ہے۔ ان کی عمر82 سال تھی۔ محبوب خان شیخ محمدی گاؤں نزد پشاور کے رہائشی تھے اور کچھ عرصہ قبل پشاور میں رہائش اختیار کر چکے تھے۔ مرحوم اپنے گاؤں شیخ محمدی میں رہائش پذیر اپنی بیٹی سے ملنے گئے ہوئے تھے اور وہاں سے واپس آنے کے لئے خاناں بس سٹاپ شیخ محمدی پر بس کا انتظار کر رہے تھے کہ چند نامعلوم افراد نے ان کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا۔

حالیہ دنوں میں مذہب کی بنیاد پر پشاور میں احمدیوں کو ہدف بنا کر حملہ کرنے کا یہ چوتھا واقعہ ہے۔ جماعت احمدیہ کے ترجمان سلیم الدین نے محبوب خان صاحب کے وحشیانہ قتل کی سخت مذمت کرتے ہوئے اس واقعہ کو مذہبی منافرت کا نتیجہ قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں بالعموم اور پشاور میں بالخصوص عقیدے کے اختلاف کی بنا پر احمدیوں کو مسلسل ہراساں کیا جا رہا ہے اور ان کی زندگیوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے جس سے احمدیوں میں عدم تحفظ کے احساس میں شدت پیدا ہو ئی ہے اور یوں محسوس ہوتا ہے کہ حکومت احمدیوں کی جان و مال کی حفاظت سے عمداً بے توجہی برت رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ احمدیوں کے خلاف نفرت آمیز مہم میں شدت آ گئی ہے ۔ نفرت انگیز مہم چلانے والوں سے مسلسل حکومتی چشم پوشی نے شر پسند عناصر کے حوصلوں کو مزید تقویت دی ہے۔ ترجمان نے ریاستی اداروں سے مطالبہ کیا کہ احمدیوں کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے فوری طور پر مؤثر اقدامات کیے جائیں اور معصوم اور پرامن احمدیوں کو دہشت گردوں کے رحم و کرم پر نہ چھوڑا جائے۔

Tags:

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *