Type to search

حکومت خبریں سیاست

بیٹے بال کی کھال نہیں اتارنی چاہیئے: پی آئی اے رپورٹ بارے سوال پر وفاقی وزیر غلام سرور خان کا جواب

Ghulam Sarwar Khan

آج سے چند ماہ قبل، جب قوم کراچی طیارے حادثے کا سوگ منا رہی تھی تو وفاقی وزیر ہوابازی غلام سرور خان نے پارلیمنٹ میں کھڑے ہو کر ایک ایسا بیان دیا جس نے پاکستان  انٹر نیشنل ائیر لائن کو لا متناہی نقصان پہنچایا ساتھ ہی قوم کا اپنی ائیرلائن پر سے اعتماد اٹھا دیا۔

یہ وہ بیان تھا جس میں وفاقی وزیر ہوا بازی نے ادارہ جاتی  تحقیقاتی رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے دعویٰ کیا تھا کہ پی آئی اے میں 40 فیصد پائلٹس کے لائسنز جعلی ہیں۔

اس بیان کے بعد جہاں پی آئی اے کو کاروبار میں نقصان ہوا وہیں اسے بین الاقوامی ہوا بازی کے سخت قوانین کی بھینٹ چڑھنا پڑا۔ کئی جہاز گراؤنڈ کر دیے گئے، پائلٹ معطل ہوئے اور پاکستان ائیر لائنز کو سخت نقصان پہنچا۔ 

تاہم اب جبکہ یہ معلوم ہوا ہے کہ وزیر موصوف کے بیانات میں کوئی صداقت نہیں تھی تو وہ معاملے سے جان چھڑانے کی کوشش میں ہیں۔

عدالت میں بھی اسی حوالے سے سوالات اٹھائے جانے کے بعد جب میڈیا نے وزیر ہوا بازی سے اس رپورٹ کے ان کو پیش کر دینے والے کے بارے میں جاننے کی کوشش کی تو وہ یہ کہتے ہوئے چلتے بنے کہ بیٹا ہر معاملے کے بال کی کھال اتارنا ضروری نہیں ہوتا۔

 

Tags:

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *