Type to search

خبریں خواتین مذہب معاشرت

الماری پر چسپاں مقدس تحریر کے اسٹیکرز ہٹانے پر دو نرسوں کے خلاف توہین مذہب کا مقدمہ درج

  • 12
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
    12
    Shares

فیصل آباد میں پولیس نے توہین مذہب کے الزام میں ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر (ڈی ایچ کیو) ہسپتال کی دو نرسوں کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔

اطلاعات کے مطابق ہسپتال کے متعدد ملازمین نے دونوں نرسوں کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا اور الزام عائد کیا کہ دونوں نے الماری پر چسپاں مقدس تحریر کے اسٹیکرز ہٹا کر توہین مذہب کی مرتکب ہوئی ہیں۔

مشتعل مظاہرین نے ایک نرس کو اپنی تحویل میں لینے کے لیے ہسپتال کے اندر کھڑی پولیس وین پر حملہ کیا لیکن پولیس نے مظاہرین سے محفوظ رہنے کے لیے خاتون کو وین کے اندر بند کردیا۔

ایک پولیس افسر نے واقعے سے متعلق بتایا کہ دو نرسوں نے ایک وارڈ میں اسٹیکر اتار کر توہین مذہب کی جہاں نفسیاتی مریض زیر علاج تھے۔

ڈپٹی میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر محمد علی نے سول لائنز پولیس میں درخواست جمع کروائی جس میں یہ دعوی کیا گیا کہ ہسپتال کی کمیٹی نے توہین مذہب کے الزام کی تصدیق کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہیڈ نرس نے ہٹایا ہوا اسٹیکر اپنی تحویل میں لے لیا تھا اور انہوں نے جمعہ کو اس معاملے سے انہیں آگاہ کیا۔

ہسپتال انتظامیہ نے پولیس کو بلایا جنہوں نے فوری طور پر نرس کو حفاظتی تحویل میں لے لیا تاکہ انہیں کسی محفوظ جگہ منتقل کیا جا سکے۔

کئی لوگوں نے انہیں پکڑنے کی کوشش کی لیکن پولیس نے نرسوں کو وین کے اندر ہی رکھا۔

پولیس اور ایلیٹ فورس نے صورتحال پر قابو پایا اور سول لائنز کے ڈی ایس پی رانا عطا الرحمٰن کی سربراہی میں ایک ٹیم نے نرسوں کو اسپتال کے احاطے سے منتقل کیا۔

مظاہرین میں عالم دین بھی شامل تھے جنہوں نے مرکزی ملزم کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا۔

پولیس نے دونوں نرسوں کے خلاف پی پی سی کی دفعہ بی 295 کے تحت مقدمہ درج کیا۔

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *