Type to search

خبریں

امریکہ میں 13 سالہ طالب علم کو 3 سال جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والی 31 سالہ خاتون سکول ٹیچر گرفتار

  • 4
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
    4
    Shares

امریکہ کی ریاست ٹومبل میں 31 سالہ خاتون استاد اپنے 13 سالہ طالب علم کو مسلسل 3 سال جنسی تشدد کا نشانہ بناتی رہیں جب تک طالب علم نے سکول انتظامیہ اور پولیس کو فون کر کے مدد کے لئے نہ بلایا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق برطانیہ کے ایک مقامی سکول کی استاد جس کا نام مارکہ لی بودین بتایا جارہا ہے نے اپنے 13 سالہ طالب علم کو جنسی تشدد کا نشانہ بنانا شروع کیا اور مسلسل تین سال اسے جنسی تشدد کا نشانہ بناتی رہی۔

31 سالہ سکول ٹیچر مارکہ لی بودین کو اتوار کے روز گرفتار کیا گیا اور ان پر کم عمر بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے جس کی سزا 25 سال قید ہے۔

ٹومبل انٹر میڈیٹ سکول کی اس استاد کے خلاف کیس کی تحقیقات گزشتہ پیر کو شروع کی گئیں جب ایک طالب علم (جس کی عمر اب 16 سال ہے) نے اپنی خاتون استاد پر الزامات لگائے کہ خاتون استاد کی طرف سے اسے گزشتہ تین سالوں سے جنسی تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔

ٹومبل پولیس چیف نے میڈیا کو بتایا کہ نوجوان نے حراسانی کے خلاف پہلے سکول انتظامیہ اور پھر پولیس کو مدد کے لئیے پکارا۔ بعد ازاں ہفتے کے روز مارکہ لی کو گرفتار کر کے پارس کاؤنٹی جیل بند کر دیا گیا۔

مارکہ لی بودین نے اپنے پہلے بیان میں کہا کہ طالب علم کی جانب سے اسے حراساں کیا گیا اور دھکمایا گیا بعد ازاں انہوں نے تسلیم کیا کہ یہ جنسی تشدد ان کی طرف سے 2018 میں شروع کیا گیا جب طالب علم کی عمر 13 سال تھی۔ اسی دوران انہوں نے طالب علم کو بہکانے کے لئے تصاویر اور ویڈیوز بھی بھیجیں۔

عدالت نے سوشل میڈیا اور دونوں فریقین کے پیغامات تک کی رسائی کی تفصیلات حاصل کی اور عدالت نے کہا کہ یہ بات ثابت ہوتی ہےکہ ملزمہ طالب علم کو جنسی تعلقات کے لئے اکسا رہی تھیں اور انہوں نے طالب علم کو غیر قانونی طریقے سے جنسی تشدد کا نشانہ بنایا۔

ملزمہ کی لنک ڈن کی پروفائل سے معلوم ہوتا ہے کہ مارکہ لی ڈین ٹومبل سٹی کے اس مقامی سکول میں گزشتہ 6 سال سے بچوں کو انگریزی پڑھا رہی ہیں۔

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *