Type to search

خبریں

بھارت میں کرونا کی سنگین صورتحال، پاکستان میں بھارت سے ہمدردی کے ٹاپ ٹرینڈز

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بھارت میں کورونا وائرس کی وبا سنگین صورتحال اختیار کرگئی ہے اور گزشتہ 2 روز سے رپورٹ ہونے والے یومیہ کیسز کی تعداد 3 لاکھ سے تجاوز کرگئی ہے۔

دہلی حکومت کے آن لائن ڈیٹا بیس کے مطابق دو تہائی سے زیادہ ہسپتالوں میں خالی بستر نہیں ہیں اور ڈاکٹروں نے مریضوں کو گھر پر ہی رہنے کا مشورہ دیا ہے۔

بھارت کے ہسپتالوں اور شمشان گھاٹ میں جگہ نہ ہونے اور آکسیجن کی قلت کی خبریں منظر عام پر آنے کے بعد پاکستانی شہری و ٹوئٹر صارفین کی جانب سے پڑوسی ملک کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا جارہا ہے۔

بھارت میں کرونا کی خوفناک صورت حال کے پیش نظر پاکستانیوں نے اپنے ہمسایہ ممالک سے بھرپور یکجہتی اور ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔ سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے وزیراعظم عمران خان سے اصرار کیا گیا کہ وہ انسانی بنیادوں پر بھارت کے لیے امداد بھیجیں۔ اس ضمن میں پاکستان میں گزشتہ کئی گھنٹوں سے WestandwithIndia #Indianeedoxygen #PakistanwithIndia #WecantBreathe#  کے ہیش ٹیگز ٹوئٹر پر ٹاپ ٹرینڈ کر رہے ہیں۔

معروف محقق اور سیاسی سماجی شخصیت ڈاکٹر عمار علی جان نے لکھا کہ pakistanStandwithIndia# دونوں اطراف کی بہترین ترجمانی کرتا ہے۔ ہمیں نفرت اور دشمنی کی بجائے انسانیت اور ہمدردی کو جگہ دینا ہوگی۔ خطے میں قیام امن اور اشتراک کے بغیر حالیہ اور مستقبل کے بحرانوں سے نہیں نمٹا جاسکتا۔

علی رائٹس نامی ٹوئٹر ہینڈل نے لکھا کہ ‘سیاسی اختلافات ایک طرف، ہمیں لازمی طور پر انسانی بنیادوں پر بھارت کی مدد کرنی چاہیے، انسانیت سے بڑا کوئی مذہب نہیں’۔

 

صحافی عاصمہ شیرازی نے ٹوئٹ کی کہ ان کا دل پڑوسی ملک کے شہریوں کی حالت زار پر دکھی ہے۔

دانیال شیخ نے لکھا کہ یہ ایک افسوسناک صورتحال ہے، ہمیں بھارت کے لیے دعا کرنی چاہیے اور اس مشکل وقت میں بھارت کی مدد کرنی چاہیے’۔

وسیم عباسی نے کہا کہ بھارت میں کورونا وائرس کی سنگین صورتحال کے بعد پاکستان سے اظہارِ یکجہتی کے پیغامات دیکھ کر اچھا لگا۔

ڈیجیٹل رائٹس ایکٹیوسٹ اسامہ خلجی نے کہا کہ ‘میں ہزاروں پاکستانی شہریوں کی جانب سے حکومت سے بھارت کی مدد کا مطالبہ کرتا ہوں’۔

انہوں نے مزید لکھا کہ پاکستان میں ‘IndiaNeedsOxugen’ اور ‘IndianLivesMatter’ کے ٹاپ ٹرینڈز دیکھ کر خوشی ہوئی۔

دوسری جانب معروفی سماجی رہنما عبدالستار ایدھی کے بیٹے اور ایدھی فاؤنڈیشن کے چیئرمین فیصل ایدھی نے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے نام خط میں کورونا سے پیدا ہونے والے بحران پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے انہیں مدد کی پیشکش کی ہے۔

انہوں نے بھارتی وزیر اعظم کو 50 ایمبولینس اور رضاکاروں کی ٹیم بھارت بھیجنے کی پیشکش کرتے ہوئے کہا کہ وہ خود رضاکاروں کی ٹیم کی قیادت کرنے کے لیے تیار ہیں۔

جس کے بعد ٹوئٹر پر ‘FaisalEdhi‘ کا ٹرینڈ چل رہا ہے اور فیصل ایدھی کے اس اقدام کو سراہا جارہا ہے۔

سوشل میڈیا صارف شازیہ محمود نے کہا کہ ‘انسانیت سب سے اہم ہے’۔

Tags:

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *