Type to search

خبریں

جاوید ہاشمی کا گھر، بیٹی کا سکول گرا دیا گیا، ‘حکومت کے خلاف سخت بیانات پر انتقامی کارروائی’

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

گزشتہ چند روزقبل حکومت کے خلاف سخت بیانات پر مبینہ انتقامی کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما جاوید ہاشمی کا گھر اور بیٹی کا اسکول گرا دیا گیا۔

مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں سینئیر سیاستدان جاوید ہاشمی نے کہا کہ پولیس نے میرے گھروں کو گھیر لیا ہے اور دیواریں بھی گرانا شروع کر دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں اپنی گرفتاری پیش کرنے جا رہا ہوں- پوچھنے پر وجہ بھی نہیں بتا رہے۔ جاوید ہاشمی کی اس ویڈیو کے بعد سوشل میڈیا پر بحث کا ایک نیا سلسلہ شروع ہو گیا۔

ایک اور ٹویٹ میں جاوید ہاشمی نے کہا کہ ’میری بیٹی سابقہ MNA میمونه ہاشمی کے گھر اور اسکول گرا دیا گیا ہے- چادر چار دیواری کا تقدس پامال کر دیا ہے- ان کے خاوند اور میرے داماد زاہد بہار ہاشمی کے ساتھ سخت رویہ اختیار کیا گیا ہے‘۔

جبکہ حالیہ ٹویٹ میں انہوں نے کہا کہ 3 گھنٹے ہو چکے ہیں ہم محاصرے میں ہیں- ہمارے گھر جانے والی تینوں سڑکیں بند ہیں- ہمیں کوئی وجہ بھی نہیں بتاتا کہ کیوں گرا رہے ہیں-

یاد رہے کہ گذشتہ ہفتے مسلم لیگ ن میں واپسی کرنے والے رہنما جاوید ہاشمی کے بیانات سے مسلم لیگ ن ہی نے لاتعلقی کا اظہار کر دیا تھا۔ ترجمان پارٹی کی جانب سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری پیغام میں کہا گیا کہ جاوید ہاشمی کا قومی ادارے کے بارے میں بیان ان کی ذاتی رائے ہے – وہ پارٹی پالیسی کی ترجمانی نہیں کرتے – مسلم لیگ ن آئینی حکمرانی پر یقین رکھتی ہے اور اُمید کرتی ہے کہ تمام ادارے اپنی آئینی حدود میں رہ کر ملک کو مظبوط بنانے کے لئے کام کریں۔

قبل ازیں سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ اسٹیٹ بینک عوام کی جیب ہوتی ہے جسے آئی ایم ایف کے حوالے کیا جا رہا ہے ،ملک میں مہنگائی کا سیلاب آئے گا، لوگ خود کشیوں پر مجبور ہوں گے جبکہ عمران خان فقیر بادشاہ بنے ہوئے ہیں ،محترمہ بے نظیر بھٹو کو ڈیلنگ نہ کرنے کا مشورہ دیا تھا لیکن انہوں نے یہ زہریلا گھونٹ پیا جس سے ان کی پارٹی کی سیاسی موت ہوئی اور وہ سندھ تک محدود ہو کر رہ گئی ،زرداری ا س بات کا ادراک کریں حالات اب بھی ویسے ہی ہیں۔

پی ٹی آئی حکومت بلدیاتی اداروں کے حق میں نہیں ہے، ہمارا مطالبہ ہے کہ نئے قومی الیکشن کروائے جائیں۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار جہانیاں کی سیاسی و سماجی شخصیات سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا تھا۔ اس موقع پر چوہدری خلیل احمد گھمن،عابد خان پاندہ،حسنین اکرم جوگی،محمد عارف سعید ،قاسم ہاشمی بھی موجود تھے۔ مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ مجھے پتہ ہے جیلوں کے اندر کیا ہوتا ہے یہ ظالم لوگ جوکچھ کرتےہیں وہ میں بتا سکتا ہوں کیونکہ میرے ساتھ کیا ہے۔ انہوں نےجسمانی طورپرمجھے جتنا تشدد کیا ہےانہوں نےآنکھوں پہ پٹیاں باندھ کردیواروں کےساتھ میرےسرٹکرائے۔میری پوری چمڑی اتاردی تھی انہوں نے یہ سب کچھ فوجیوں کے دورمیں ہوا ہے۔

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *