Type to search

خبریں

جہانگیر ترین گروپ کے نقطہ نظر میں بڑا وزن ہے تاہم علی ظفر کی رپورٹ پارٹی لائن طے کرے گی: فواد چوہدری

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے ’ناراض‘ رہنما جہانگیر ترین کے گروپ میں شامل اراکین اسمبلی کے حوالے سے کہا ہے کہ ان کے نقطہ نظر میں بھی بڑا وزن ہے تاہم علی ظفر کی رپورٹ پارٹی کی داخلی لائن طے کرے گی۔

لاہور میں جہانگیر ترین گروپ کے رکن نعمان لنگڑیال کے ظہرانے کے بعد پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے کہا کہ جس طرح جہانگیر ترین گروپ نے وزیر اعظم عمران خان پر اعتماد کا اظہار کیا ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ انہیں تحریک انصاف پر فخر ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ ہی وہ بنیادی نقطہ ہے جس پر سب ایک جگہ جمع ہیں۔ کبھی کسی مسئلے پر بات چیت ہوجاتی ہے تاہم بڑے معاملے میں تمام لوگ متفق ہیں کہ عمران خان ہمارے لیڈر ہیں اور تحریک انصاف ہماری جماعت ہے۔ تاہم جہانگیر ترین کے حوالے سے انکا کہنا تھا کہ ’مجھے پورا یقین ہے کہ نہ تو جہانگیر ترین کو یہ توقع ہے کہ وزیر اعظم عمران خان ان کے لیے غیر قانونی سفارش کریں گے اور نہ ہی یہ عمران خان کا مزاج ہے’۔

فواد چوہدری نے کہا کہ علی ظفر پر مشتمل کمیٹی اس معاملے کی چھان بین کر رہی اور اس کی رپورٹ کا ہمیں اور جہانگیر ترین گروپ کو بھی انتظار ہے۔ ہمیں اور اس گروپ کو بھی رپورٹ پر اعتبار ہوگا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ علی ظفر کی رپورٹ پارٹی کی ’داخلی لائن‘ طے کرے گی جبکہ جہانگیر ترین کے عدالتی معاملات پر کوئی مداخلت نہیں کرے گا۔تاہم  ہم نے ایک ساتھ سیاسی سرگرمیاں جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے جس طرح ایک پارٹی کو کرنا چاہیے۔ ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ ذاتی یا اجتماعی مسائل پر بیٹھ کر بات کریں گے اور عمران خان کی قیادت میں ایک جگہ جمع ہیں۔

فواد چوہدری نے اپوزیشن پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ حالیہ چند روز سے حریف سیاسی جماعتیں بھنگڑے ڈال رہی ہیں کہ پی ٹی آئی میں اختلاف کی دراڑیں گہری ہیں۔ہماری پارٹی میں کوئی گروپنگ نہیں ہے اور اب تمام افواہیں دم توڑ جائیں گی۔عمران خان وہ واحد لیڈر ہیں جن کا کراچی سے لے کر خیبر تک ووٹ بینک ہے جبکہ مسلم لیگ (ن) وسطی پنجاب اور پیپلز پارٹی اندورن سندھ کی سیاسی جماعتیں ہیں۔

چند وفاقی وزرا کی آرمی چیف سے ملاقات پر وزیر اعظم عمران خان کی جانب سے اظہار برہمی سے متعلق سوال کے جواب میں فواد چوہدری نے کہا کہ ’مجھے اس بارے میں کچھ نہیں معلوم‘۔

اس سے قبل پی ٹی آئی کے ناراض رہنما جہانگیر ترین نے ان تمام میڈیا رپورٹس کو مسترد کردیا تھا جس میں ‘جہانگیر ترین گروپ’ تشکیل دینے کی بات کی گئی۔ لاہور میں بینکنگ جرائم کورٹ کے احاطے کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا تھا کہ ‘میں ان میڈیا رپورٹ کو مسترد کرتا ہوں اور واضح کر دینا چاہتا ہوں کہ ہم پی ٹی آئی کا حصہ تھے، ہیں اور انشااللہ رہیں گے’۔

Tags:

You Might also Like

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *