حمائمہ ملک بھی شادی شدہ زندگی میں خود پر ہونے والے ظلم کیخلاف بول پڑیں

اداکارہ حمائمہ ملک نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹاگرام پر اپنے اوپر کیے جانے والے ظلم کی داستان بیان کرتے ہوئے کہا کہ مجھ پر کیے جانے والے مظالم آج بھی دن رات مجھے پریشان کرتے ہیں۔

حمائمہ ملک کا کہنا تھا کہ جب ان کی شادی ہوئی تھی وہ صرف 19 سے 20 برس کی تھیں اور اپنے اوپر کیے جانے والے مظالم بھی اہل خانہ سے شیئر نہیں کرسکی تھیں۔

انہوں نے لکھا کہ آج میں شرمندگی محسوس کررہی ہوں کہ اپنی شادی کے تین برسوں تک ظلم برداشت کرتی رہی اور اپنے لیے کچھ نہ کرسکی۔اگرچہ اس بات کو بہت سال گزر چکے ہیں لیکن  وہ سال اور ان میں سہنے والا درد آج بھی دن رات مجھے پریشان کرتاہے۔

حمائمہ نے مزید انکشاف کرتے ہوئے کہ جب وہ اپنی اور اپنے گھر والوں کی زندگی کو بہتر بنانے کے لیے کام کررہی تھیں اس وقت بھی انہیں ایک بار نہیں بلکہ کئی باردھمکایا گیا لیکن اب میں بالکل بھی خوفزدہ نہیں ہوں بلکہ میں اس بات پر شرمندہ ہوں کہ میں اب تک خاموش کیوں رہی۔

واضح رہے کہ اداکارہ حمائمہ ملک نے اداکار شمعون عباسی سے 2010 میں شادی کی تھی لیکن یہ شادی زیادہ عرصہ برقرار نہ رہ سکی تھی اور دونوں کے درمیان دو برس بعد طلاق ہوگئی تھی۔

یاد رہے کہ اداکار فیروز خان کی بہن حمائمہ نے اس سے قبل کبھی اپنی شادی شدہ زندگی کے بارے میں گفتگو نہیں کی یہ پہلا موقع ہے کہ جب انہوں نے اپنی ازدواجی زندگی کے چھپے رازوں کو بے نقاب کیا ہے۔